Main Khiradmand Rahoon Ya Tera Vahshi Ho Jaaoon


میں خرد مند رہوں یا تیرا وحشی ہو جاوں
جو بھی ہونا ہے مجھے عشق میں جلدی ہو جاوں

زندگی چاک کی گردش کے سوا کچھ بھی نہیں
میں اگر کوزہ گری چھوڑ دوں مٹی ہو جاوں

پھر سے لے جائے میری ذات سے تُو عشق ادھار
اور میں پھر سے تیرے حسن پہ باقی ہو جاوں

کوئی دم تُو میرے چہرے پہ خوشی بن کے ابھر
کوئی دم میں تیرے چہرے کی اداسی ہو جاوں

یا تو دریا میں بدل جاوں کہ لہریں اٹھیں
ہا بگولوں کاکہا مان لوں آندھی ہو جاوں

اس کی جانب سے کوئی ہجر مجھے آ کے لگے
اور میں معرکہ ء عشق میں زخمی ہو جاوں

جبر کی طرح کوئی جبر کروں اپنے ساتھ
کیوں نا کچھ دیر کو میں اپنے پہ حاوی ہو جاوں

ابھشیک شکلا

MaiN khiradmand rahooN ya tera vahshi ho jaaooN

Jo bhi hona hai mujhe ishq meiN jaldi ho jaaooN

Zindagi chaak ki gardish ke siva kuchh bhi nahiN

MaiN agar koozaagari chhoR dooN mitti ho jaaooN

Phir se le jaaye meri zaat se tu ishq udhaar

Aur maiN phir se tere husn pe baaqi ho jaaooN

Koi dam tu mere chehre pe khushi ban ke ubhar

Koi dam maiN tere chehre ki udaasi ho jaaooN

Ya to dariyaa meiN badal jaaooN ki lahreiN uttheiN

Ya bagooloN ka kahaa maan looN aaNdhi ho jaaooN

Uski jaanib se koi hijr mujhe aa ke lage

Aur maiN maa’rka-e-ishq meiN zakhmi ho jaaooN

Jabr ki tarah koi jabr karooN apne saath

KyoN na kuchh der ko maiN apne pe haavi ho jaaooN

(Abhishek Shukla)

Advertisements

3 thoughts on “Main Khiradmand Rahoon Ya Tera Vahshi Ho Jaaoon

  1. اعلیٰ ورڈنگ
    عمدہ خیال۔۔۔
    اس شعر کے دوسرے مصرعہ پر کچھ روشنی ڈالیئے۔۔شاید میں غلط لفظ سمجھ رہی ہوں۔”باقی”کس لیے یوز کیا جا رہا ہے۔۔؟
    پھر سے لے جائے میری ذات سے تُو عشق ادھار
    اور میں پھر سے تیرے حسن پہ باقی ہو جاوں

  2. میں خرد مند رہوں یا تیرا وحشی ہو جاوں
    جو بھی ہونا ہے مجھے عشق میں جلدی ہو جاوں

    زندگی چاک کی گردش کے سوا کچھ بھی نہیں
    میں اگر کوزہ گری چھوڑ دوں مٹی ہو جاوں

    پھر سے لے جائے میری ذات سے تُو عشق ادھار
    اور میں پھر سے تیرے حسن پہ باقی ہو جاوں

    کوئی دم تُو میرے چہرے پہ خوشی بن کے ابھر
    کوئی دم میں تیرے چہرے کی اداسی ہو جاوں

    یا تو دریا میں بدل جاوں کہ لہریں اٹھیں
    ہا بگولوں کاکہا مان لوں آندھی ہو جاوں

    اس کی جانب سے کوئی ہجر مجھے آ کے لگے
    اور میں معرکہ ء عشق میں زخمی ہو جاوں

    جبر کی طرح کوئی جبر کروں اپنے ساتھ
    کیوں نا کچھ دیر کو میں اپنے پہ حاوی ہو جاوں

    ابھشیک شکلا

  3. lub pè maiñ uski mosalsal hi, dùä si ho jäoüñ!
    itnä chähè wo mujhè, uskä majäzi ho jäoüñ!
    yä k’hudä donoñ ki taqdiir milä dè ab tou!
    “koi dum wo mèrè chèhrè ki k’hüshi bann ubhrè;
    koi dum chèhrè ki maiñ uskè udäsi ho jäoüñ!”
    (moàzrat k säth)
    23nov13
    ~ jïm alif parvèz / abhishèk shuklä.

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s