Shahr Sunsaan Hai Kidhar Jayein


شہر سنسان ہے کدھر جائیں
    خاک ہو کر کہیں بکھر جائیں

    رات کتنی گزر گئی لیکن
    اتنی ہمت نہیں کہ گھر جائیں

    یوں ترے دھیان سے لرزتا ہوں
    جیسے پتے ہوا سے ڈر جائیں

    اُن اجالوں کی دھن میں‌پھرتا ہوں
    چھب دکھاتے ہی جو گزر جائیں

    رین اندھیری ہے اور کنارہ دور
    چاند نکلے تو پار اتر جائیں​

Shahr sunsaan hai  kidhar jayeiN

Khaak ho kar kahiN bikhar jaayeiN

Raat kitni guzar gayii, lekin

Itni himmat nahi K ghar jaayeiN

YuN tere dhyaan se laraztaa hun

Jaise pat_te hawa se dar jaayeiN

Un ujaaloN ki dhun mein phirta hun

Chhab dikhaate hi jo guzar jaayeiN

Rain aNdheri hai aur kinaara door

ChaNd nikle to paar utar jaayeiN

(Nasir Kazmi)

Advertisements

2 thoughts on “Shahr Sunsaan Hai Kidhar Jayein

  1. شہر سنسان ہے کدھر جائیں
    خاک ہو کر کہیں بکھر جائیں

    رات کتنی گزر گئی لیکن
    اتنی ہمت نہیں کہ گھر جائیں

    یوں ترے دھیان سے لرزتا ہوں
    جیسے پتے ہوا سے ڈر جائیں

    اُن اجالوں کی دھن میں‌پھرتا ہوں
    چھب دکھاتے ہی جو گزر جائیں

    رین اندھیری ہے اور کنارہ دور
    چاند نکلے تو پار اتر جائیں​

    بہترین انتخاب۔ ۔

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s